شرد پوار نے این سی پی صدر کے عہدے سے استعفیٰ واپس لے لیا۔

[ad_1]

"میں اپنے مداحوں کا احترام کرتا ہوں”

انہوں نے کہا کہ میرے استعفے کے حوالے سے پارٹی کے دیگر رہنما اور میرے دوست بھی یہی چاہتے ہیں۔ پورے ملک اور خاص کر مہاراشٹر کے لوگوں نے مجھے اپنا فیصلہ بدلنے پر مجبور کیا۔ میں نے سب کے جذبات کا احترام کرتے ہوئے استعفیٰ واپس لینے کا اعلان کیا ہے۔ میں اپنے مداحوں اور پارٹی کے لیے کام کرنے والے لوگوں کی عزت کرتا ہوں۔

شرد پوار نے پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ آپ سب کے جذبات کی توہین نہیں کی جا سکتی۔ آپ کی محبت کی وجہ سے میں این سی پی صدر کے عہدے سے سبکدوش ہونے کا فیصلہ واپس لیتا ہوں۔

’’نئے لوگوں کو نئی ذمہ داریاں ملیں گی‘‘

پریس کانفرنس کے دوران شرد پوار نے کہا کہ میں صدر رہوں گا لیکن اب میں نے سوچا ہے کہ پارٹی کے اندر کسی بھی عہدے یا ذمہ داری کے لیے جانشینی کے منصوبے پر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ مستقبل میں پارٹی کے اندر تنظیمی تبدیلیوں پر توجہ دوں گا۔ عوام کو نئی ذمہ داریاں دوں گا اور نئے لیڈر بھی تیار کروں گا۔ میں تنظیم کی ترقی کے لیے بھی اپنی پوری قوت سے کام کروں گا اور پارٹی کے نظریات اور مقاصد کو عوام تک پہنچاؤں گا۔

اہم بات یہ ہے کہ کچھ دن پہلے شرد پوار کے بھتیجے اجیت پوار نے کہا تھا کہ پارٹی لیڈروں اور کارکنوں کو شرد پوار کے فیصلے کو قبول کرنا چاہیے۔ حالانکہ اس دوران انہوں نے یہ ضرور کہا تھا کہ شرد پوار اپنے فیصلے پر حتمی فیصلہ اگلے چند دنوں میں ہی لیں گے۔

پوار نے ایک پروگرام کے دوران اعلان کیا۔

جیسے ہی شرد پوار نے 2 مئی کو ایک پروگرام کے دوران اپنے استعفیٰ کا اعلان کیا، اس کے بعد ہی ان کے حامیوں نے اس فیصلے کے خلاف نعرے بازی شروع کردی۔ کچھ لوگ اجتماع گاہ سے باہر آکر احتجاج کرنے لگے۔ اس کے بعد شرد پوار نے انہیں یقین دلایا تھا کہ انہوں نے صرف عہدے سے استعفیٰ دیا ہے لیکن وہ پارٹی کے لیے کام کرتے رہیں گے۔ اس کے بعد ہی کارکن پرسکون ہوئے۔

پارٹی کے اندر انتشار کی وجہ بنی؟

اب شرد پوار کے اس فیصلے کو لے کر کئی طرح کی باتیں ہو رہی تھیں۔ کچھ لوگ اسے پارٹی کے اندر پچھلے کچھ دنوں سے چل رہی رسہ کشی کا نتیجہ بتا رہے تھے۔ایسے لوگوں کا کہنا تھا کہ شرد پوار ان باتوں سے بہت مایوس ہیں۔ چنانچہ انہوں نے عہدہ چھوڑنے کا فیصلہ کیا۔ جب کہ کچھ لوگ ان کے اس اقدام کو ایک نیا ماسٹر اسٹروک قرار دے رہے تھے۔

"فیصلے کو ماننا چاہیے”

اس سب کے درمیان اجیت پوار نے پارٹی لیڈروں سے کہا تھا کہ کچھ دن پہلے پوار نے خود مجھ سے بات کی تھی اور کہا تھا کہ اب وقت آگیا ہے کہ پارٹی کی باگ ڈور کسی اور کو سونپ دی جائے۔ ایسے میں ہم سب کارکنوں کو اس کے فیصلے کو اس کی عمر اور صحت کے تناظر میں دیکھنا چاہیے۔ وقت کے ساتھ ساتھ سب کو فیصلہ کرنا ہوگا۔ پوار صاحب نے بھی فیصلہ لیا ہے اور وہ اسے واپس نہیں لیں گے۔

پوار نے شام کو ایک مختلف بیان دیا۔

تاہم منگل کی شام اجیت پوار نے پارٹی لیڈروں سے کہا کہ شرد پوار نے کہا کہ میں نے فیصلہ لیا ہے لیکن میں اس پر دوبارہ غور کروں گا۔ اور مجھے اس کے لیے دو تین دن کا وقت چاہیے۔ پوار صاحب کے استعفیٰ کے بعد پارٹی کے کچھ اور لیڈروں نے اپنے عہدوں سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ یہ بند ہونا چاہیے۔

[ad_2]
Source link

کے بارے میں alrazanetwork

یہ بھی چیک کریں

Gharib Nawaz

غریب نواز پر الزام تراشی: سازش پرانی اور تیاری پوری ہے !!

غریب نواز پر الزام تراشی: سازش پرانی اور تیاری پوری ہے !! غلام مصطفےٰ نعیمی …

Leave a Reply

واٹس ایپ پیغام بھیجیں۔