جانے والے کمال رکھتے تھے: آہ!سید ثناء اللہ رضوی

جانے والے کمال رکھتے تھے: آہ!سید ثناء اللہ رضوی

عالمی وبا کے اس دور میں معزز ہستیوں کی اموات کا نہ تھمنے والا سلسلہ گزشتہ ڈیڑھ سالوں سے بدستور جاری ہے۔ روزانہ بلامبالغہ کم ازکم۱۰ نامور شخصیات کے لیے کلمات ترجیع لکھنا تو جیسے عام سی بات ہوگئی ہے۔ اس سے قبل بھارت میں عظیم شخصیات کے اتنے بڑے پیمانے پر رخصت ہونے کی شاید ہی کوئی تاریخ ملتی ہوگی۔ علماء، فضلاء، ائمہ، مشائخ، حفاظ کا ایک ساتھ اس کثرت سے رخصت ہونا یقیناً کسی بہتر مستقبل کا شاخسانہ تونہیں ہوسکتا۔ اللہ خیر فرمائے!
الحاج سید ثناء اللہ رضوی صاحب سابق ناظم اعلیٰ ادارہ شرعیہ اور موجودہ سرپرست بھی اسی سلسلے کی عظیم کڑی ہیں، جن کی رحلت نے حساس دلوں کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا ہے۔ صبح ساڑھے گیارہ بجے جیسے موبائل کا نیٹ آن ہوا، خبروں کی جیسے باڑھ آگئی۔ ناقابل یقین حالات میں مختلف معتبر ذرائع کھنگالتا رہا، آخر کار خبر کی تصدیق ہوئی۔
سید صاحب رفقائے ادارہ شرعیہ کی اس پہلی کھیپ کے میرکارواں تھے جنہیں علامہ ارشدالقادری علیہ الرحمہ نے اپنی تربیت سےصیقل کرکے اپنے بعد ادارہ کی حفاظت وصیانت اور ترویج وترقی کی ذمہ داری سونپی تھی اور دنیا نے دیکھا کہ مرحوم نے عہد وفا کا حق اداکردیا۔ بے سروسامانی کے عالم میں ادارہ نے اپنا سفر شروع تو کردیا تھا لیکن منزل کا تعین ابھی باقی تھا، لیکن علامہ علیہ الرحمہ نے جن جیالوں کو یہ ذمہ سونپی تھی اُن سب نے اپنے اپنے حصے کا حق ادا کیا اور آج ادارہ اپنے خوبصورت اور عہد ساز منزل کی طرف تیز گامی سے رواں دواں ہے۔ سید ثناء اللہ رضوی انہیں جیالوں میں سے ایک ہیں۔ سید صاحب کے دورِ نظامت میں ادارہ شرعیہ اپنے خوبصورت ترین اور ترقی پذیر عہد کا گواہ بنا۔ ادارے کے لیے ان کی جہد مسلسل اور بے لوث قربانیاں تاریخ کبھی فراموش نہیں کرسکتی۔
علامہ غلام رسول بلیاوی اور الحاج سید ثناء اللہ رضوی کی جوڑی نے پچھلی دودہائیوں میں ادارہ شرعیہ کو عروج وارتقاء کے جس مقام پر لاکر کھڑا کیا ، وہ یقینا آنے والی نسلوں کے لیے مینارۂ نور ہے۔ سید صاحب کی قربانیوں کی لمبی داستان ہے لیکن اس داستان کی انتہا کے طورپر صرف انتا کہنا کافی ہوگا کہ علاقے کے عظیم سرمایہ داروں میں جن کا شمار ہوتا تھا،رب کائنات نے دولت و ثروت اور جاہ وحشمت میں کوئی کمی نہ رکھی تھی، اس شخص کو ادارہ شرعیہ کے لیے گھر گھر جاکر گیہوں، آٹا اور چاول مانگتے ہم نے دیکھا ہے، دس دس روپیے کی رسید کاٹنے کے لیے پانچ پانچ بار ایک ہی دروازے کا چکر لگاتے دیکھا ہے۔ ان کا عہد نظامت چند ایک ناخوشگوار واقعات کے بجائے ہزاروں خوشگوار اور عہد آفریں ترقیات اور تبدیلیوں کے لیے یاد رکھا جائے گا۔ ان شاء اللہ تبارک وتعالیٰ!
رب کریم سے دعا ہے کہ ان کی خدمات جلیلہ کے بدلے انہیں بہترین اجر ملے اور جواررحمت میں استقبال ہو۔ پس ماندگان اور رفقائے ادارہ کو صبر جمیل عطاہو اور ادارہ شرعیہ کو ان کی ہی طرح پھر کوئی بے لوث اور جانباز سپہ سالار ملے جو وہیں سے شروع کرے جہاں سید صاحب نے چھوڑا ہے۔پس ماندگان اورادارہ شرعیہ کے لیے یقیناً یہ مشکل گھڑی ہے، لیکن کل نفس ذائقۃ الموت کے مصداق ہم میں سے ہر ایک کو دارِ بقا کی طرف رخصت ہونا ہے۔ بس کمال یہ ہے کہ کون اپنے حصے کا قرض کس قدر ادا کرکے رخصت ہوتاہے۔

سوگوار:
احمدرضا صابری
(مدیر الرضا انٹر نیشنل والرضا نیٹورک) پٹنہ


الرضا نیٹورک کا اینڈرائید ایپ (Android App) پلے اسٹور پر بھی دستیاب !

الرضا نیٹورک کا موبائل ایپ کوگوگل پلے اسٹورسے ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے       یہاں کلک کریں۔
الرضا نیٹورک کا واٹس ایپ گروپ جوائن کرنے کے لیے      یہاں پر کلک کریں۔
الرضا نیٹورک کا فیس بک پیج  لائک کرنے کے لیے       یہاں کلک کریں۔
الرضا نیٹورک کا ٹیلی گرام گروپ جوائن کرنے کے لیے یہاں پر کلک کریں۔
الرضانیٹورک کا انسٹا گرام پیج فالوکرنے کے لیے  یہاں کلک کریں۔

مزید پڑھیں:

معاشرہ

معاشرے کی بربادی کے اسباب و عوامل 

معاشرے کی بربادی کے اسباب و عوامل  از۔محمد قمرانجم قادری فیضی ایڈیٹر مجلہ جام میر بلگرام شریف ﻣﻌﺎﺷﺮﮦ: ﺍﻓﺮﺍﺩ ﮐﮯ ﺍﯾﮏ ﺍﯾﺴﮯ ﮔﺮﻭﮦ ﮐﻮ ﮐﮩﺎ ﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ ﮐﮧ ﺟﺴﮑﯽ ﺑﻨﯿﺎﺩﯼ ﺿﺮﻭﺭﯾﺎﺕ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﻣﯿﮟ ﺍﯾﮏ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﺳﮯ ﻣﺸﺘﺮﮐﮧ ﺭﻭﺍﺑﻂ ﻣﻮﺟﻮﺩ ﮨﻮﮞ ﺍﻭﺭ ﻣﻌﺎﺷﺮﮮ ﮐﯽ ﺗﻌﺮﯾﻒ ﮐﮯ ﻣﻄﺎﺑﻖ ﯾﮧ ﻻﺯﻣﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﮧ ﺍﻧﮑﺎ ﺗﻌﻠﻖ ﺍﯾﮏ ﮨﯽ ﻗﻮﻡ …

0 comments
Gharib Nawaz

غریب نواز پر الزام تراشی: سازش پرانی اور تیاری پوری ہے !!

غریب نواز پر الزام تراشی: سازش پرانی اور تیاری پوری ہے !! غلام مصطفےٰ نعیمی روشن مستقبل دہلی زیادہ دن نہیں گزرے جب بدنام زمانہ نیوز اینکر امیش دیوگن نے ایک ڈبیٹ شو میں خواجہ غریب نواز کو آکرانتا (حملہ آور) کہہ کر توہین کی تھی۔وقتی طور پر ہمارے لوگوں کو غصہ آیا، مختلف مقامات …

0 comments
Manipur Violence

منی پور٬ قبائلی تنازعے اور حکومت ــ ــ ــ

منی پور میں ہندوستان کے ساتھ الحاق سے پہلے سے لیکر اب تک مختلف اوقات میں خونریزی جنگیں ہوئیں ہیں۔ غالباً یہ باتیں اکثر ہندوستانیوں کو معلوم ہے کہ دوسری جنگ عظیم کے دوران جاپانیوں نے تقریباً دو سال تک منی پور پر بمباری کی۔

0 comments
Yoga یوگا

یوگا ورزش ہے یا کچھ اور؟

جو لوگ اسے صرف کسرت یا ورزش مانتے ہیں،وہ غور کریں کہ صرف کسرت وورزش کو عالمی پہچان دلانے کے لیے بی جے پی کو محنت کرنے کی کیا ضرورت تھی، کیا بھارت کے علاوہ دنیا میں کہیں بھی کسرت اور ورزش کا تصور نہیں ہے؟

0 comments
Love Jihad

لوجہاد کا پروپیگنڈہ: ایک رپورٹ

گزشتہ چھ سالوں سے ہندوتوا وادی تنظیموں کی طرف سے یہ دعویٰ کیا جاتا ہے کہ بین الاقوامی سازش کے تحت مسلم لڑکے ہندو لڑکی سے شادی رچا کر ملک ہندوستان میں اسلام اور مسلمانوں کا غلبہ قائم کرنا چاہتے ہیں اور یہ تنظیمیں اس طرح کی شادی کو ’لو جہاد‘ کا نام دیتی ہیں۔

0 comments

کے بارے میں alrazanetwork

یہ بھی چیک کریں

اسد اقبال

اسداقبال صاحب! بات درست بھی ہوتو بھی کہنے والے کا اپنا کردارمعنی رکھتا ہے!

ثناخوانی حبیب علیہ الصلوٰ والسلام جیسے مقدس عمل کو کارپوریٹ سیکٹر میں تبدیل کرکے ایک نفع بخش تجارت کی شکل دینے کا سہرا جس کے سرہو وہ اپنے آپ کو دیندار شاعرخود اپنی زبان سے کہےتو ری ایکشن فطری بات ہے۔

Leave a Reply

واٹس ایپ پیغام بھیجیں۔
%d bloggers like this: